Posted in Uncategorized

لیٹرز سے میسجز تک

ادھر دوڑ ہے ، ادھر دوڑ ہے ، یہ جینا یارو دوڑ ہے۔ کوئی آگے ہے کوئی پیچھے ہے۔ سب بھاگم بھاگ دوڑ رہے ہیں تو ایسے میں کون ہے جو آہستہ چلنے کو عقلمندی کہے گا؟ کوئی نہیں۔ سوائے ان کے جو آگے بڑھنا ہی نہیں چاہتے ہیں اور پھر جب معاملہ دل کا ہو تو بالکل دیرے نہیں کرنی چاہئیے۔ جب کاغز کی جگہ موبائل کی ایل سی ڈی ہو، اردو میں خوشخطی کی جگہ رومن کا فونٹ ہو اور کبوتر کی جگہ بس ایک بٹن پیغام پہنچانے کے لیے کافی ہو تو سمجھ جائیے کہ زمانہ اب لیٹرز کا نہیں میسجز کا ہے۔ دنیا موبائل ہوچکی ہے جناب۔

خطوط لکھنے سے اجتناب کریں کیونکہ جتنی دیر میں آپکا خط پہنچے گا اتنی دیر میں جانے کتنی بار آپکی محبوبہ ایک سے زیادہ محبوب بنا چکی ہو گی۔

سوچی پیا تے بندہ گیا ۔۔۔۔) )

میسج بھیجنے سے پہلے اس بات کا خیال ضرور رکھیں کہ کون سا میسج کس کو بھیجنا ہے۔ ایک سے زیادہ گرلفرینڈ رکھنے والے محتاط رہیں۔

( کتنی ہیں ؟؟؟ )

جب معملہ ♥ کا ہے تو پیار بھرے میسجز بھیجیں جس میں شاعری یا پیار کا اظہار ہو۔ ہر فضول میسج فارورڈ کرنے کی ضرورت نہیں ہے۔

( اوووو ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ ♥♥♥)

Advertisements

Author:

simplicity is mine.

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s