Posted in urdu ghazal

آج روٹھے ہوئے ساجن کو بہت یاد کیا 

​آج روٹھے ہوئے ساجن کو بہت یاد کیا 

اپنے اُجڑےہوئے گلشن کو بہت یاد کیا

جب کبھی گردش تقدیر نے گھیرا ہے ہمیں 

گیسوئے یار کی الجھن کو بہت یاد کیا

شمع کی جوت پہ جلتے ہوئے پروانوں نے 

اک ترے شعلہ دامن کو بہت یاد کیا

جس کے ماتھے پہ نئی صبح کا جھومر ہو گا 

ہم نے اس وقت کی دلہن کو بہت یاد کیا

آج ٹوٹے ہوئے سپنوں کی بہت یاد آئی 

آج بیتے ہوئے ساون کو بہت یاد کیا

ہم سر طُور بھی مایوس تجلی ہی رہے 

اس درِ یار کی چلمن کو بہت یاد کیا

مطمئن ہو ہی گئے دام و قفس میں ساغر 

ہم اسیروں نے نشیمن کو بہت یاد کیا

Advertisements

Author:

simplicity is mine.

One thought on “آج روٹھے ہوئے ساجن کو بہت یاد کیا 

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out /  Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out /  Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out /  Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out /  Change )

Connecting to %s

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.