Posted in urdu ghazal

میرے ساتھ تم بھی دعا کرو

​میرے ساتھ تم بھی دعا کرو ، یوں کسی کے حق میں برا نہ ہو

کہیں اور ہو نہ یہ حادثہ ، کوئی راستے میں جدا نہ ہو
میرے گھر سے راستے کی سیج تک ، وہ اک آنسو کی لکیر ہے

ذرا بڑھ کے چاند سے پوچھنا ، وہ اسی طرف سے گیا نہ ہو
سر شام ٹھری ہوئی زمیں ، آسماں ہے جھکا ہوا

اسی موڑ پر مرے واسطے ، وہ چراغ لے کر کھڑا نہ ہو
وہ فرشتے آپ ہی ڈھونڈیئے ، کہانیوں کی کتاب میں

جو برا کہیں نہ برا سنیں ، کوئی شخص ان سے خفا نہ ہو


وہ وصال ہو کہ فراق ہو ، تری آگ مہکے گی ایک دن

وہ گلاب بن کے کھلے گا کیا، جو چراغ بن کے جلا نہ ہو
مجھے یوں لگا کے خاموش خوشبو کے ہونٹ تتلی نے چھو لیے

انہی زرد پتوں کی اوٹ میں کوئی پھول سویا ہوا نہ ہو
اسی احتیاط میں میں رہا اسی احتیاط میں وہ رہا

وہ کہاں کہاں میرے ساتھ ہے ، کسی اور کو یہ پتہ نہ ہو

Advertisements

Author:

simplicity is mine.

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out /  Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out /  Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out /  Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out /  Change )

Connecting to %s

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.