Posted in urdu ghazal

نیند آنکھوں میں مسلسل نہیں ہونے دیتا

نیند آنکھوں میں مسلسل نہیں ہونے دیتا

وہ میرے خواب مکمل نہیں ہوتے دیتا

آنکھ کے شیش محل سے وہ کسی بھی لمحے

اپنی تصویر کو اوجھل نہیں ہونے دیتا

رابطہ بھی نہیں رکھتا ہے سرِ وصل کوئی

اور تعلق بھی معطل نہیں ہونے دیتا

دل تو کہتا ہے اُسے لوٹ کے آنا ہے یہیں

یہ دلاسہ مجھے پاگل نہیں ہونے دیتا

وہ جو اک شہر ہے پانی کے کنارے آباد

اپنی اطراف میں دلدل نہیں ہونے دیتا

قریہ جاں پہ کبھی ٹوٹ کے برسیں روحی

ظرف اشکوں کو وہ بادل نہیں ہونے دیتا

Advertisements

Author:

simplicity is mine.

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out /  Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out /  Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out /  Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out /  Change )

w

Connecting to %s

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.