Posted in urdu ghazal

آج روٹھے ہوئے ساجن کو بہت یاد کیا 

​آج روٹھے ہوئے ساجن کو بہت یاد کیا 

اپنے اُجڑےہوئے گلشن کو بہت یاد کیا

جب کبھی گردش تقدیر نے گھیرا ہے ہمیں 

گیسوئے یار کی الجھن کو بہت یاد کیا

شمع کی جوت پہ جلتے ہوئے پروانوں نے 

اک ترے شعلہ دامن کو بہت یاد کیا

جس کے ماتھے پہ نئی صبح کا جھومر ہو گا 

ہم نے اس وقت کی دلہن کو بہت یاد کیا

آج ٹوٹے ہوئے سپنوں کی بہت یاد آئی 

آج بیتے ہوئے ساون کو بہت یاد کیا

ہم سر طُور بھی مایوس تجلی ہی رہے 

اس درِ یار کی چلمن کو بہت یاد کیا

مطمئن ہو ہی گئے دام و قفس میں ساغر 

ہم اسیروں نے نشیمن کو بہت یاد کیا

دِل میں ھم ایک ھی جذبے کو سموئیں کیسے

​دِل میں ھم ایک ھی جذبے کو سموئیں کیسے

اب تجھے پا کے یہ اُلجھن ھے کہ کھوئیں کیسے
ذھن چَھلنی جو کِیا ھے، تو یہ مجبوری ھے

جتنے کانٹے ھیں وہ تلووں میں پروئیں کیسے
ھم نے مانا، کہ بہت دیر ھے حشر آنے میں

چار جانب، تِری آہٹ ھو تو سوئیں کیسے
کِتنی حسرت تھی، تجھے پاس بِٹھا کر روتے

اب یہ مُشکل ھے، تِرے سامنے روئیں کیسے

Ghazal 

​     .,,USEY KEHNA,,.

 “Har waada-e-wafa ko bhulane ka

    SHUKRIYA

;

 Deewana kar k Aankh churane ka

    SHUKRIYA

;

  Hum jante thay aap k

 qabil nahi hain hum,

;

 Kuch roz dil ki Aas  barhane ka

  SHUKRIYA

;

 Tabeer jin ki daikh kar Aankhein hain zakhm zakhm,

;

Itne haseen khwaab dikhane ka

     SHUKRIYA

;

 Mera Khasta Haal Daikh Kr Tere Phool Sy Hont Khill Uthy,,

;

Mujhe apny haal Ka Ghum Nahi..

 Tere Muskurany Ka

     Shukriya.

Ghazal 

“Likha Hua Tha Jo Qismat Me Wo Mita Na Sake,
“Hum Apni Zindagi Me Apna Unhe Bana Na Sake,
“Nazar Ke Samne Darya Guzar Raha Tha Mager,
“Jo Aag Dil Me Lagi Thi Ause Bujha Na Sakey,
“Ye Soch Kar MaiNe DiL Ka Hi Kho0n Kar Dala,
“Ke Tumhare Baad Koi Dil Me Phir Sama Na Sakey.,.!

Adaa Nazrein Churane Ki Kahaan Se SeekhLi Tum Ne

Adaa Nazrein Churane Ki Kahaan Se SeekhLi Tum Ne

Yeh Aadat Rooth Jaane Ki Kahaan Se SeekhLi Tum Ne..
Bharosa Tha Tumhe Mujh Pe Muqqamal AajSe Pehle
Riwayat Azmane Ki Kahaan Se Seekh LiTum Ne..
Mohabbat Ke Alawa Kuch Nahi Tha TeriAankhon Me
Yeh Nafrat Zamane Ki Kahaan Se Seekh LiTum Ne..